سومناتھ چٹرجی کا ۸۹؍ سال کی عمر میں انتقال

کولکاتا: لوک سبھا کے سابق اسپیکر سومناتھ چٹرجی کا پیر کو صبح قریب سوا آٹھ بجے یہاں ایک اسپتال میں انتقال ہوگیا۔ ان کی عمر ۸۹؍ سال تھی۔ وہ ۱۰؍ بار لوک سبھا کے رکن رہے۔ سومناتھ چٹرجی ایک معروف وکیل تھے اور کئی بار انہوں نے سی پی ایم کے اپنے ساتھی کارکنوں کی قانونی لڑائی مفت میں لڑی۔ وہ کمیونسٹ پارٹی کے پہلے ایسے رہنما تھے  جنہیں لوک سبھا کا اسپیکر بننے کا افتخار حاصل ہوا۔

سومناتھ چٹرجی کے والد ہندو مہاسبھا کے لیڈر تھے، لیکن انہوں نے اپنے والد کے نقش قدم پر چلنے کی بجائے کمیونسٹ پارٹی کے معروف رہنما جیوتی بسو سے متاثرہوکر سی پی ایم میں شمولیت اختیار کی۔

سومناتھ چٹرجی کی پیدائش ۲۹؍ جولائی ۱۹۲۹ء کو آسام کے تیج پور میں ہوئی تھی۔ وہ پہلی بار ۱۹۷۱ء میں لوک سبھا کے ضمنی انتخاب میں جادھوپور حلقہ سے آزاد امیدوار کے طور پر کھڑے ہوئے اور جیت حاصل کی۔ کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا (مارکسسٹ) نے ان کی حمایت کی تھی۔ اس کے بعد سے وہ سی پی ایم کے ٹکٹ پر الیکشن لڑتے رہے۔ انہیں ۱۹۸۴ء کے لوک سبھا الیکشن میں ممتا بنرجی سے ہار کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ سومنا چٹرجی نے لوک سبھا میں جادھوپور، بردھمان اور بولپور حلقوں کی نمائندگی کی۔ انہیں ۲۰۰۴ء کے لوک سبھا الیکشن میں یوپی اے کی کامیابی کے بعد اسپیکر منتخب کیا گیا۔ اس عہدے پر وہ ۲۰۰۹ ء تک رہے۔

گزشتہ چند مہینوں سے سومناتھ چٹرجی کی طبیعت خراب تھی۔ انہیں منگل کو اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا لیکن طبیعت بہتر ہونے کے بعد انہیں چھٹی دے دی گئی تھی۔ اچانک اتوار کو طبیعت بگڑی جس کے بعد انہیں پھر اسپتال میں داخل کرایا گیا۔ پیر کی صبح انہوں نے دنیا کو الوداع کہا۔

Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *