ریاستی حکومت اُردو کے تئیں سنجیدہ، اُردو کی بدحالی کا اصل ذمہ دار اُردو داں طبقہ: ہارون رشید

پٹنہ(پریس ریلیز)بہارقانون ساز کونسل پٹنہ کے
کانفرنس ہال میں حق پسند صحافی سیدعبدالرافع پر صحافی اشرف استھانوی کے ذریعہ لکھی گئی کتاب ’’حق پسند صحافی عبدالرافع‘‘ کا رسم اجراء عمل میں آیا۔اس موقع پر ایم ایل سی سلمان راغب، ہندی ساہتیہ اکادمی کے چیئرمین انیل سلبھ، سابق جج اکبررضا جمشید،سینئرصحافی سیدشہبازعالم، ایس این شیام، عوامی اُردو نفاذ کمیٹی بہار کے روحِ رواں اشرف استھانوی، سینئر صحافی خورشیدہاشمی، مناظرسہیل، مشہورشاعر شنکر کیموری، انصاف منچ کے ریاستی نائب صدرنیازاحمد، بیداری کارواں کے نائب صدرمقصودعالم پپو خان، مطیع الرحمن موتی، زاہدحسین وغیرہ کثیرتعداد میں دانشوران موجود تھے۔ رسم اجراء تقریب میں مہمان خصوصی کی حیثیت سے شامل ہوئے بہارقانون ساز کونسل کے کارگذار چیئرمین ہارون رشید نے کہا کہ اُردو کے تئیں ریاستی حکومت اور خاص کر وزیراعلیٰ نتیش کمار کافی سنجیدہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے دنوں کچھ غلط فہمیاں پیدا ہوگئی تھی عوام الناس میں کہ اُردوکے ساتھ حکومت ناانصافی کرنے جارہی ہے ، ایسا کچھ بھی نہیں ہے۔حکومت اُردوکے تئیں کافی سنجیدہ ہے اور اُردو کو فروغ دینے کے لئے حکومت ہرممکن کوشش کررہی ہے۔ انہوں نے حکومت کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ ہماری حکومت میں کثیرتعداد میں اُردو کے اساتذہ بحال ہوئے اور آگے بھی اُردو کے فروغ کے لئے بہت کچھ کیا جانا باقی ہے۔ لیکن وہیں انہوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جس اُردو کے فروغ کی لوگ بات کرتے ہیں دراصل اُس اُردوکی بدحالی، بربادی میں کسی دوسرے زبان کے لوگوں کا کوئی رول نہیں ہے اصل ذمہ دار اُردو داں طبقہ خود ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ آج کل اُردو کا ڈھونڈورا پیٹنے والے بہت سارے لوگ تو اُردو پڑھنا لکھنا تک نہیں جانتے ہیں اور سیدھے طور پر حکومت کو اُردو کے تئیں غیرسنجیدہ ہونے کا الزام لگاکر برا بھلا کہتے دکھائی دیتے ہیں۔مسٹر رشید نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بہارقانون ساز کونسل کاجب میں کارگذار چیئرمین ہوں تب سے میرے یہاں آج تک ایک بھی درخواست اُردو میں نہیں آیا ہے،بتائیں اُردو کے فروغ کا ڈھونڈرا پیٹنے والے شخص کہ اِس کا ذمہ دار کون ہے؟ کیا اُردو میں درخواست لکھ کر کسی شعبہ میں دینے کی ذمہ داری بھی ریاستی حکومت کی ہی ہے۔ اُردو کے فروغ کا فرضی ڈھونڈورا پیٹنے والے افراد اپنی نااہلی اور ناکامی کو حکومت کے سر پرہرگز نہ تھوپیں۔حکومت اُردو کو بڑھانے، پڑھانے اور روزگار سے جوڑنے کے لئے ہرممکن تعاون دے رہی ہے اور آگے بھی دیتی رہے گی۔ انہوں نے اپنے خطاب میں اُردو صحافیوں اور دانشوروں سے جذباتی انداز میں کہا کہ کچھ لوگ بلاوجہ ہماری حکومت کے اتحاد کو بدنام کررہے ہیں کہ یہ اتحاد مسلم مخالف ہے، ایسا کچھ بھی نہیں ہے۔ اُنہوں نے برجستہ کہا کہ ہم جس عہدے پر بیٹھے ہیں اور جب تک بیٹھے رہیں گے ان شاء اللہ تعالیٰ ہم اپنی اُمت کا کام ایمانداری سے کرتے رہے ہیں اور آگے بھی کرتے رہیں گے،ہمیں کوئی روک نہیں سکتا، بلکہ حکومت کے مکھیا نتیش کمار جی کا بھرپور ساتھ بھی مل رہا ہے۔ ہماری کوشش ہوگی کہ اُردو اور ہندی سے جڑے جو بھی معاملے سامنے آئیں گے اُسے ہرممکن حالت میں عملی جامہ پہنانے کی کوشش کروں گا، ساتھ ہی انہوں نے لوگوں سے حکومت کے تئیں سنجیدہ رویہ اپنانے اور اُردو کی بدحالی کو دُور کرنے کے لئے حکومت سے اپنے صحیح مطالبات کو رکھنے کی بھی بات کہی۔ وہیں اِس موقع پر متھلانچل میں نئی نسل کا اُبھرتا نوجوان، حق پسند، ایماندار اور بے لوث سماجی خدمت کوانجام دینے والے آل انڈیا مسلم بیداری کارواں کے قومی صدرنظرعالم کو عوامی اُردو نفاز کمیٹی بہار کی جانب سے بہارقانون ساز کونسل کے کارگذار چیئرمین جناب ہارون رشید کے ہاتھوں کمپوزٹ کلچر پروموٹنگ ایوارڈ سے نوازے جانے پر پورے متھلانچل میں خوشی کی لہر دیکھی جارہی ہے۔
Share

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *