تیلیا پوکھر کی سڑک کو کسی مسیحا کا انتظار

مدھوبنی(شرف الدین عبدالرحمن تیمی):
ضلع کے رہیکا بلاک حلقہ میں واقع مسلمانوں کی کثیر آبادی والے گاؤں تیلیاپوکھر کی سڑک برسوں سے خستہ حال ہونے کی وجہ سے اب جھیل میں تبدیل ہوگئ ہے۔اس کی وجہ گاؤں کے باشندوں کے علاوہ آس پاس کی بستیوں کے لوگوں کو بھی شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہےلیکن انتظامیہ اور عوامی نمائندگان کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگ رہی ہے۔ انتظامیہ اور عوامی نمائندوں کی طرف سے اس سڑک کیتعمیر نوکے لیے اب تک کوئی مثبت قدم نہیں اٹھایا گیا ہے۔ اس کی وجہ سے یہاں کے لوگوں میں شدید ناراضگی ہے۔یہ سڑک کپیلیشور استھان سے جیبچا چوک ہوکر مدھوبنی جانے والی اہم سڑک ہے اوراس سے روزانہ عوامی نمائندگان اور افسران کا گذر ہوتا ہے ۔ اس سب کے باوجودسڑک کی خستہ حالی پر نہ تو عوامی نمائندگان کی نظر پڑتی ہے اور نہ ہی افسران  اس کی طرف کوئی توجہ دیتے ہیں۔ نتیجہ کے طور پر یہ سڑک گڈھوں میں تبدیل ہوگئی ہے۔ اس بارے میں کلیم الدین اسلامی نے کہا کہ آج آزادی کے 67 سال گزر جانے کے بعد بھی ہمارے گاؤں کی سڑک کی حالت ویسی ہی ہے جیسے آزادی سے پہلے تھی۔ایم پی بدلے،ایم ایل اے بدلے،سرکار بدلی لیکن نہیں بدلی تو تیلیاپوکھر کی تقدیر۔ سڑک کی خستہ حالی پر مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے شمشیر عالم تیمی نے کہا کہ اس سڑک کی مرمت کے لیے ہم لوگوں نے کئ بار افسران اور مقامی ایم ایل سےاپیل کی لیکن کسی نے اب تک اس کی طرف کوئی توجہ نہیں دی۔جب الیکشن کا زمانہ آتا ہے تو یہ لوگ ہر بار یہی کہہ کر ووٹ لے کر چلے جاتے ہیں کہ جیت کر جانے کے بعد سب سے پہلا کام اس سڑک کی خستہ حالی کو دور کرنا ہوگا۔
ککرول دکھنی کے مکھیا ثناءاللہ رحمانی نے بتایا کہ سڑک کی خستہ حالی کا یہ عالم ہے کہ پانی جمع ہونے کی وجہ سے کئ جگہ بڑے بڑے گڈھے ہوگئے ہیں۔ اس کی وجہ سے اکثر حادثے بھی ہوتے رہتے ہیں۔اس دوران کئی لوگوں نے کہا کہ اب پانی سر سے اوپر ہوگیا ہے۔ عوامی نمائندوں اور انتظامیہ نے جلد سے جلد سڑک کو ٹھیک کرنے کے لیے ٹھوس اقدام نہیں کیا تو پھر وہ سڑکوں پر اترنے کو مجبور ہوجائیں گے۔ اس سلسلے میں کلکٹر سے بھی تعاون کرنے کی اپیل کی گئی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *