بلجیم پر دہشت گردانہ حملہ، ۲۶ ہلاک، متعدد زخمی

تصویر: بشکریہ بی بی سی
تصویر: بشکریہ بی بی سی

برسیلز، ۲۲ مارچ (ایجنسیاں): آج صبح برسیلز کے بین الاقوامی ہوائی اڈہ پر دو بم دھماکے ہوئے، جب کہ تیسرا بم شہر کے ایک میٹرو اسٹیشن پر پھٹا۔ ان دہشت گردانہ حملوں میں اب تک ۲۶ لوگوں کے ہلاک اور متعدد دیگر کے بری طرح زخمی ہونے کی خبریں موصول ہو رہی ہیں۔ ان حملوں کے بعد بلجیم میں چوتھے درجے کا ہائی الرٹ جاری کر دیا گیا ہے، جو کہ دوسری عالمی جنگ کے بعد دوسری بار جاری کیا گیا ہے۔

بلجیم کے وزیر صحت نے بتایا کہ برسیلز کے زاوینٹم ایئرپورٹ پر صبح تقریباً ۷ بجے دو بم دھماکے ہوئے، جس میں ۱۱ افراد ہلاک اور ۸۱ دیگر زخمی ہو گئے۔ تیسرا دھماکہ ایک گھنٹہ بعد مائلبیک میٹرو اسٹیشن پر ہوا، جہاں ۱۵ افراد ہلاک اور ۵۵ دیگر زخمی ہوگئے۔ مرنے والوں کی تعداد میں مزید اضافہ ہونے کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ چار دن قبل برسیلز سے پیرس دہشت گردانہ حملوں کے مفرور ملزم صلاح عبدالسلام کو گرفتار کیا گیا تھا۔

تصویر: بشکریہ بی بی سی
تصویر: بشکریہ بی بی سی

ان حملوں کی پوری دنیا نے مذمت کی ہے۔ بلجیم کے وزیر اعظم چارلس مائیکل نے تازہ حملوں کو بزدلانہ اور ہولناک قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ ’’یہ ایک المناک دن ہے، سیاہ دن ہے۔ میں ہر ایک سے شانتی بنائے رکھنے اور ہمدردی کا اظہار کرنے کی اپیل کرتا ہوں۔‘‘

حملوں کے بعد برسیلز میں اس ہوائی اڈہ کے علاوہ باقی تمام ٹرانسپورٹ سسٹم کو بند کر دیا گیا ہے۔ وہاں کی سرکاری بیلگا نیوز ایجنسی نے بتایا کہ بم دھماکوں سے پہلے فائرنگ بھی کی گئی ہے اور حملہ آور عربی زبان میں باتیں کر رہے تھے۔ سوشل میڈیا پر دکھایا گیا کہ کیسے دھماکے کے بعد لوگ حیران و پریشان چاروں طرف بھاگ رہے تھے۔

گیٹ وِک اور ہیتھرو ایئرپورٹ پر سیکورٹی انتظامات سخت کر دیے گئے ہیں اور برطانیہ کے دفتر خارجہ نے اپنے شہریوں کو ایک ایڈوائزری جاری کرکے بلجیم میں بھیڑ بھاڑ والی جگہوں پر جانے سے منع کیا ہے۔ حملے کے بعد برطانوی وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون نے کوبرا رسپانس کمیٹی کی ایک میٹنگ طلب کی۔ دوسری طرف فرانس نے بھی ایک ایمرجنسی میٹنگ بلاکر اپنے سیکورٹی انتظامات سخت کر دیے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *