بی جے پی کی روش پر چل رہے ہیں ملائم

راجیہ سبھا کے لئے کسی مسلمان کو نہیں دیا ٹکٹ

mulayam-singh-yadav-amar-singh

نئی دہلی، ۱۸ مئی (حنیف علیمی): اتر پردیش میں مسلمانوں کی مسیحا اور ہمدرد سمجھی جانے والی سماجوادی پارٹی کا مسلم مخالف چہرہ اس وقت سامنے آیا، جب راجیہ سبھا امیدواروں میں ایک بھی مسلم لیڈر کو شامل نہیں کیا گیا، جبکہ پارٹی نے ایک یادو اور تین ٹھاکروں کو راجیہ سبھا کا ٹکٹ دیا ہے۔

اتر پردیش میں مسلمانوں کی ایک اچھی خاصی تعداد کے باوجود سماجوادی پارٹی نے راجیہ سبھا امیدواروں میں ایک بھی مسلم نمائندے کو شامل نہ کرکے غیر ذمہ داری کا پورا ثبوت پیش کیا ہے، جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ملائم سنگھ مسلمانوں کو صرف ووٹ بینک کے طور پر استعمال کر رہے ہیں۔ دوسری طرف ۶ سال کے بعد پارٹی میں امر سنگھ کی واپسی کے ساتھ ان کو راجیہ سبھا کا امیدوار بنانے پر پارٹی اندرونی خانہ جنگی کا شکار ہو رہی ہے۔ امر سنگھ کو راجیہ سبھا کا ممبر بنانے پر یوپی کے قدآور مسلم لیڈر اعظم خان اور رام گوپال یادو کی مخالفت کے باوجود ملائم سنگھ یادو نے اپنے تغلقی تیور دکھاتے ہوئے امر سنگھ کی راجیہ سبھا امیدواری پر مہر لگا دی ہے۔ اس بار سماجوادی پارٹی نے امر سنگھ، بینی پرساد ورما، ریوتی رمن، بلڈر سنجے سیٹھ، سکھرام یادو، وشمبھر نشاد، بھگوتی سنگھ اور پرتاپ سنگھ کو راجیہ سبھا بھیجنے کا کا اعلان کیا ہے۔

سماجوادی پارٹی کے پارلیمانی بورڈ کی میٹنگ میں منگل کو امر سنگھ کے نام کو لیکر خوب وبال ہوا۔ بتایا جا رہا ہے کہ امر سنگھ کو پارٹی کے ٹکٹ پر راجیہ سبھا بھیجنے کے فیصلے پر اعظم خان نے اپنی مخالفت کا اظہار کیا تو پروفیسر رام گوپال یادو نے بھی انکا ساتھ دیا۔ اس طرح امر سنگھ کو لیکر پارٹی میں خانہ جنگی شروع ہوگئی ہے، جس کے بعد ملائم سنگھ نے کسی کی پروا نہ کرتے ہوئے امر سنگھ کی راجیہ سبھا امیدواری پر مہر لگا دی۔

لکھنؤ سے رامپور لوٹنے پر سماجوادی پارٹی کے قدآور لیڈر اعظم خان نے امر سنگھ کو راجیہ سبھا کا امیدوار بنانے پر اپنی ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ یہ جو ہو رہا ہے اچھا نہیں ہورہا ہے اور بہت افسوس ناک ہے۔ یہ نیتا جی (ملائم سنگھ) کا فیصلہ ہے، وہ پارٹی کے مالک ہیں، ان کے فیصلے کے خلاف نہیں جاسکتے۔ راجیہ سبھا کے علاوہ سماجوادی پارٹی نے ایم ایل سی کے امیدواروں کے نام کا بھی اعلان کردیا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *