سمری بختیار پور میں اردو بیداری کانفرنس ۲۶ نومبر کو

نامہ نگار

سہرسہ

المسلم ایجوکیشنل اینڈ ویلفیئر فاؤنڈیشن کےنائب سکریٹری مولانا لطف الرحمن قاسمی نے ایک پریس ریلیز جاری کرتے ہوئے کہا ہے اردو نے شروع ہی سے مختلف قوموں اور خطوں کے درمیان رابطہ بنانے اور انہیں مضبوط کرنے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ یہ زبان آج بھی ہندوستان کے الگ الگ خطوں میں بسنے والے لوگوں کو آپس میں جوڑے رکھنے میں کلیدی رول ادا کر رہی ہے۔
انہوں نے کہا کہ اردو زبان کے ارتقاء کے بارے میں دیکھا جائے تو اس کو اولیاء کی زبان کہا جاتا ہے۔ مولانا لطف الرحمن قاسمی نے دنیا کی تیسری بڑی زبان ہے۔ اردو زبان و ادب سے بچوں کی آشنائی ان کے مستقبل کے لیے ضروری ہے کیونکہ مادری زبان ہی ابتدائی تعلیم کا بہترین ذریعہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج
ضرورت اس بات کی ہے کہ نئی نسل کو اپنی مادری زبان میں تعلیم حاصل کرنے کا موقع فراہم کیا جائے۔ اس کے ساتھ ہی یہ بھی بڑی حقیقت ہے کہ علوم اسلامیہ کا ایک بڑا ذخیرہ اردو زبان ہی میں موجود ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان ہی مقاصد کو مد نظر رکھتے ہوئے المسلم فاؤنڈیشن کے زیر اہتمام اردو بیداری کانفرنس کا انعقاد نومبر کو مدرسہ فیض قاسم پہاڑ پور، سمری بختیار پور ضلع سہر سہ میں ہوگا۔ انہوں نے بتایا کہ کانفرنس کی صدارت حافظ ممتاز رحمانی صدر تنظیم ائمہ مساجد سہرسہ و امام جامع مسجد رانی باغ کریں گے جبکہ مہمان خصوصی کی حیثیت سے مولانا عر فان احمد سمستی پوری کی شرکت ہوگی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *