سی ایس لوئس کی کتاب نارنیا کا اردو ترجمہ منظرِعام پر

نئی دہلی، ۱۹ ؍مارچ (پریس ریلیز)سی ایس لوئس کی مشہور کتاب نارنیا کا اردو ترجمہ ’’شیر، چڑیل اور الماری ‘‘کے نام سے میتھیو ڈالٹن نے کیا ہے۔ اس مشہورِ زمانہ کتاب کے مصنف سی ایس لوئس نے اپنے بچوں کو زبان سکھانے کی غرض سے یہ کتاب لکھی تھی۔ میتھیو ڈالٹن نے اس کا ترجمہ اردو میں کرتے وقت اس بات کا خاص خیال رکھا ہے کہ اس میں زبان آسان ہو تاکہ بچے سمجھ سکیں۔ آج یہاں ڈائنامک انسٹی ٹیوٹ ذاکر نگر میں اس کے اردو ترجمے کا اجرا ڈاکٹر انوارالحق اور مسٹر آرنی سوان کے ہاتھوں عمل میں آیا۔ کتاب کی اشاعت پر مبارک باد کا سلسلہ جاری ہے۔ اس کتاب کو ماؤنٹین پیِک نے شائع کیا ہے۔

(میتھیو ڈالٹن ایک بچی سارہ خیری کو کتاب دیتے ہوئے)
(میتھیو ڈالٹن ایک بچی سارہ خیری کو کتاب دیتے ہوئے)

قابل ذکر ہے کہ اردو ا س کتاب کے مترجم میتھیو ڈالٹن کی مادری زبان نہیں ہے۔ اس کے باوجودانہوں نے اتنی آسان زبان میں اس کا ترجمہ کیا ہے کہ اہلِ زبان اس کو پڑھ کر دانتوں تلے انگلیاں دبا لیں۔
ڈاکٹر انوارالحق نے رسم اجرا کے موقع پر اس ترجمہ کی خصوصیت کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہا اس میں نہ تو لفظ بہ لفظ ترجمہ کیا گیا ہے اور نہ ہی بہت زیادہ آزادی لی گئی ہے ۔اس کے ساتھ ہی کتاب پڑھنے سے کہیں پر ایسا محسوس نہیں ہوتا کہ یہ ترجمہ کسی ایسے شخص نے کیا ہے جس کی مادری زبان اردو نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ اردو زبان و ادب کے لیے یہ بے حد ضروری ہے کہ دوسری اہم زبانوں کے ادب پاروں کا اردو میں ترجمہ کیا جائے ۔ نارنیا کا اردو ترجمہ اردو ادب کے خزانے میں ایک بیش بہا اضافہ ہے۔ مسٹر آرنی سوان نے میتھیو ڈالٹن کو اس کتاب کی اشاعت پر مبارک باد دیتے ہوئے ان کی برسوں کی محنت کو کتابی صورت میں دیکھ مسرت کا اظہار کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ کتاب پڑھنے کی عادت کو فروغ دینے کی ضرورت ہے۔ والدین کو بھی اپنے بچوں کو کتابیں پڑھنے کی ترغیب دینی چاہیے۔ اس کتاب کی رسمِ اجرا کے موقع پر بڑی تعداد میں ڈائنامک انسٹی ٹیوٹ کے طلبا نے شرکت کی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *