ووٹر ویری فکیشن کی مدت میں30 نومبر تک کی توسیع کو غنیمت سمجھیں: امارت شرعیہ

پٹنہ: (عادل فریدی) مولانا محمد شبلی القاسمی قائم مقام ناظم امارت شرعیہ نے ووٹرو یری فکیشن کی طرف تمام لوگوں کی توجہ مبذول کراتے ہوئے کہا ہے کہ سبھی لوگ جلد از جلد ووٹر ویری فکیشن کرا لیں ، ا س میں تاخیر بالکل نہ کریں ووٹر ویری فکیشن اور کریکشن کی آخری تاریخ 18نومبر سے بڑھ کر 30نومبر ہو گئی ہے ، اس کو غنیمت سمجھتے ہوئے جو لوگ اب تک باقی بچے ہوئے ہیں وہ جلد از جلد ویری فکیشن کرا لیں ،اس معاملہ کو بالکل ہلکے میں ہرگز نہ لیں ، ووٹر لسٹ میں آپ کا نام ہونا بہت اہمیت رکھتا ہے، کیوں کہ ووٹر آئی کارڈ شہریت کے سب سے اہم ثبوتو ں میں شمار ہو تا ہے ، آپ کو معلوم ہے کہ امیر شریعت مفکر اسلام حضرت مولانا محمد ولی رحمانی صاحب دامت برکاتہم کے الیکشن کمشنر کو توجہ دلانے اور الیکشن کمیشن سے امارت شرعیہ اور دیگر تنظیموں کے مطالبات کے بعد18نومبر تک تاریخ بڑھا ئی گئی تھی، اب اس میں مزید 12دنوں کی توسیع ہوئی ہے ، اس لیے اس بڑھی ہوئی مدت کو غنیمت سمجھیں اور جلد از جلد اپنا ووٹر کارڈ ویری فکیشن کرا لیں اور اگر کوئی غلطی ہے تو اس کو ٹھیک کرالیں ۔ائمہ کرام سے بھی اپیل ہے کہ وہ اپنی اپنی مسجد کے منبر ومحراب سے لوگوں کو توجہ دلائیں ، ایسا لگتا ہے کہ پھر اس معاملہ میں لوگ سست پڑ گئے ہیںاور اسن کام کی اہمیت نہیں سمجھ ہے ہیں یہی وجہ ہے کہ ان میں پہلے جیسا جوش و خروش باقی نہیں ہے ۔ بعض جگہوں میں تو اب تک بہت ہی کم لوگوں نے ویری فکیشن کرایا ہے اور ابھی بھی ایک بڑی تعداد خواب غفلت میں پڑی ہوئی ہے ۔واضح ہو کہ مفکر اسلام حضرت مولانا محمد ولی رحمانی صاحب ا میر شریعت بہار اڈیشہ و جھارکھنڈ کی ہدایت پر امارت شرعیہ کی ایک ٹیم اول دن سے ہی مسلسل لوگوں کی رہنمائی اور ترغیب میں سرگرم عمل ہے ۔تینوں ریاستوں کے سبھی ذیلی دفاتر اور دار القضاء کے ذریعہ بھی لوگوں میں منظم طور پر بیداری پیدا کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے ، مرکزی دفتر میں شعبہ تنظیم کے ذمہ داران و کارکنان شب وروز علاقوں کے نقبائ، نائبین نقبائ، بلاک و اضلاع کے امارت شرعیہ کے صدر اور سکریٹری سے رابطہ میں ہیں ۔ اب تک اس عنوان سے بیداری لانے کے لیے ہزاروں نقبائ و نائبین نقبائ، ذمہ داران ، سماجی کارکنان اور دانشوروں سے رابطہ کیا گیا ، اور یہ عمل تا ہنوز جاری ہے ۔ علمائ مدارس، ائمہ مساجد اور پڑھے لکھے نوجوانوں سے بھی بات کی گئی ، اور ان سے اس مہم میں کام لیا گیا ۔ پچاس ہزار سے زائد پمفلٹ شائع کر کے تقسیم کیا گیا، اخباروں میں مسلسل نیوز اور اشتہار کے ذریعہ لوگوں کو با خبر کیا گیا ، سوشل میڈیا کے ذریعہ بھی اس مہم کو گھر گھر پہونچایا گیا، آن لائن ویری فکیشن اور کریکش کا طریقہ تحریری طور پر آسان الفاظ میں لکھ کر کام کرنے والوں کو سوشل میڈیا کے ذریعہ دستیاب کرا یا گیا تاکہ ان کو کام کرنے میں سہولت ہو ۔ مقامی لوگوں کی سہولت کے لیے مرکزی دفتر میں آن لائن ویری فکیشن کی خدمات فراہم کی گئیں۔ ذیلی دار القضائ امارت شرعیہ کے جملہ قضاۃ کرام ، ارکان شوریٰ ، عاملہ ، ٹرسٹ کے ممبران ، ارباب حل و عقد، اصحاب فکر و نظر اور ملی و سماجی کارکنان کو اس تحریک کی کمان سونپی گئی اور انہیں اپنے اپنے ضلع میں شہر سے لے کر دیہاتوں تک کی ذمہ داری دی گئی ، اور الحمد للہ قضاۃ حضرات نے بھی پوری لگن کے ساتھ اس کا م کوانجام دیا، اکثر قضاۃنے میٹنگیں بلا کر لوگوں کو متوجہ کیا گیا ۔اس کے علاوہ امارت شرعیہ کے ارباب حل و عقد ، ارکان ومندوبین مجلس شوریٰ و عاملہ سے بھی رابطہ کیا گیا ۔ یہ سبھی حضرات اپنے اپنے علاقوں میں بی ایل او (BLO) اور باخبر نوجوانوں کے ذریعہ اس تحریک کو عملی شکل دینے میں لگے رہے ۔ساتھ ہی مختلف ذرائع سے عوام و خواص سے بار بار اپیل کی جا تی رہی کہ مدت ختم ہونے میںکچھ ہی روز بچے ہیں اس لیے جلدی اس کام کو مکمل کرائیں ۔ قائم مقام ناظم صاحب نے اپنے بیان میں یہ بھی کہا کہ امارت شرعیہ کی جانب سے الیکشن کمیشن کو متوجہ کرتے ہوئے کئی بار ویب سائٹ میں ہو رہی تکنیکی خامیوں کو دور کرنے اور بی ایل او کو کاموں کی رفتار بڑھانے کے تعلق سے ہدایت جاری کرنے کی مانگ کی گئی ۔ یہ سب ہونے کے باوجود بھی جس انداز میں بیداری متوقع تھی وہ نہیں دیکھی گئی ،عوام کی جانب سے بہت زیادہ دل چسپی کا مظاہرہ کیا گیا اور نہ بی ایل او وغیرہ نے ہی چابک دستی کا مظاہرہ کیا ۔ جس کی وجہ سے طے شدہ وقت میں ٹارگیٹ تک رسائی نہیں ہو سکی، جس کا احساس الیکشن کمیشن کو بھی ہوا ہے یہی وجہ ہے کہ ایک بار پھر سے مدت میں توسیع کی گئی ہے ۔اس لیے جو لوگ باقی بچے ہیں وہ جلد از جلدویری فکیشن کے کام کو کرائیں، ورنہ آنے والا وقت بہت دشوار ہونے والا ہے ، ہمیں اپنے کاغذات کے اعتبار سے پہلے سے تیار رہنے کی ضرورت ہے۔

Facebook Comments
Spread the love
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply