کٹیہار میں وقف جائیداد پر ناجائز قبضہ

اسدالرحمن

کٹیہار :

کٹیہار میں وقف کی ہزاروں ایکڑ جائیداد پر غیرقانونی قبضے کی بات سامنےآ رہی ہے، لیکن بہار اسٹیٹ سنی وقف بورڈ کے چیئرمین محمد ارشاداللہ اس سے بے خبر ہیں ۔ انہوں نے یہاں میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ عوام کا تعاون حاصل رہا تو وقف جائیداد کو ناجائز قبضہ سے چھڑا لیا جائے گا ۔ارشاداللہ نے بتایا کہ وقف کمیٹی کی اجازت کے بغیر کوئی بھی وقف بورڈ کی جائیداد کو لمبے وقت کے لیے کسی کو لیز یا کرائے پر بھی نہیں دے سکتا ہے ۔ البتہ وہ یہ نہیں بتا پائے کہ کٹیہار ضلع میں وقف کی کون کون سی جائیداد ناجائز قبضے میں ہے ۔ انہوں نے یہ بھی نہیں بتایا کہ وقف کی پراپرٹی کو کن لوگوں نے اور کس بنیاد پر کس کے حوالے کی ہے۔

بہار اسٹیٹ سنی وقف بورڈ کے چیئرمین کی دلیل بہت سے لوگوں کے گلے نہیں اتر رہی ہے۔ یہاں کے معروف سماجی کارکن فیض عالم عرف منا کا تو کہنا ہے کہ بورڈ کے چیئرمین کو سب پتہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ چیئرمین چاہیں تو وقف کی جائیداد کو ناجائز قبضوں سے بڑی آسانی سے چھڑا سکتے ہیں۔ منا نے کہا کہ یہاں کی وقف جائیداد اور اس پر ناجائز قبضہ کے بارے میں بہار اسٹیٹ سنی وقف بورڈ کے موجودہ چیئرمین کو تحریری صورت میں اطلاع دی جا چکی ہے لیکن وہ کچھ کرنے کے لیے تیار نظر نہیں آ رہے ہیں۔ منا نے کہا کہ وقف بورڈ کے چیئرمین محمد ارشاداللہ وزیر اعلٰی نتیش کمار کے چہیتے ہیں اور ہر وقت ان کے ہی گن گان میں لگے رہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کہ چیئرمین چاہیں تو وقف پراپرٹی کو ناجائز قبضوں سے آزاد کروا کر کٹیہار کے لوگوں کے دلوں میں اپنا تاریخی مقام بنا سکتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *